برگد کی جانب سے نوجوان لیڈرشپ کیلئے چھے روزہ ٹریننگ کے پہلے مرحلے کا اختتام

(رپورٹ: رامین رعنا)

زندگی کے ہر لمحے سے کچھ نہ کچھ سیکھ کر جانا ہی اصل زندگی ہے۔ ہر انسان میں کچھ نہ کچھ اللّٰہ تعالیٰ نے صلاحیت رکھی ہوتی ہے فرق صرف اتنا سا ہوتا ہے کہ کوئی صلاحیتوں کو تراشنے والا ہو۔ برگد(Bargad) کی طرف سے ہمیشہ نوجوانوں کو ایک پلیٹ فارم مہیا ہوتا ہے جس میں وہ اپنی صلاحیتوں کو اجاگر کر کے اپنے ملک و انسانیت کیلئے کچھ اچھا کریں ۔

اس قوم کو شمشیر کی حاجت نہیں رہتی
ہو جس کے جوانوں کی خودی صورت فولاد

کوئی بھی ملک تب تک ترقی نہیں کرسکتا جب تک اس کہ نوجوان مضبوط نہیں ہوں گے اور ان میں صحیح اور غلط کا شعور نہیں ہوگا۔ نوجوان کیسے ملک کیلئے کام کرسکتے ہیں، اسی حوالے سے چند دن پہلے دنوں برگد کی طرف سے یوتھ لیڑر شپ آن کیمپس کے حوالے سے چھے روزہ ٹریننگ کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں پنجاب اور خیبرپختونخوا کی یونیورسٹیوں کے نوجوان شامل تھے۔

ٹریننگ کا حصہ بننے والی طالبہ رامین رعنا کی کہانی، اسی کی زبانی

میں بہت خوش قسمت ہو کہ مجھے اس قسم کی ٹریننگ حاصل کرنے کا موقع ملا۔ میرا تعلق ایک ایسے علاقے سے ہے جو بہت پسماندہ ہے۔ لیکن برگد (Bargad) کی وجہ سے مجھے موقع ملا کہ میں اپنی صلاحیتوں کو اجاگر کر سکوں اور اپنے لوگوں کی خدمت کر پاؤں۔
اس میں ہمیں سب سے پہلے خود پر اعتماد کرنا سکھایا کیونکہ جب تک خود پر اعتماد نہ ہو تب تک کوئی کچھ بھی نہیں کرسکتا۔ اور مجھ میں اتنا اعتماد پیدا کیا کہ میں سب کے ساتھ اب بلا جھجھک بات کر سکتی ہوں۔ میرے اندر کے ڈر اور خوف کو نکال دیا۔
ہماری سوچ کو بہتر کرنے کیلئے مختلف سرگرمیاں کروائی گئیں کہ بحیثیت نوجوان ہم critical thinking کس طرح کر سکتے ہیں۔ ایک دوسرے کو ہم کس طرح سمجھ سکتے ہیں۔ اگر ہم غلط ہو تو ہمیں خود کو صحیح کرنا چاہیے نہ کہ ہم اپنی غلطی پر ڈٹ جائیں۔ ہمیں یہ بھی سیکھنے کو ملا کہ ہماری شناخت کیا ہے۔ ہم کس طرح دوسروں سے مختلف شناخت کے حامل ہیں۔ ہمیں کس طرح الگ شناخت کہ لوگوں کے ساتھ رہنا چاہیے۔ ساتھ ساتھ ہمیں دوسروں کہ حقوق کے بارے میں بتایا گیا خاص طور پر ٹرانسجینڈر کے حوالت سے بہت بتایا گیا کہ وہ کیسے بیچارے بے بسی کی زندگی گزارتے ہیں۔ ان کو بھی جینے کا حق ہے جو کہ ہماری دکیانوسی سوچ کی وجہ سے ظلم و بربریت کاشکار ہیں۔ دوسرے مذاہب کگ لوگوں کے بارے میں بھی ہماری صحیح طریقہ سے رہنمائی کی۔ اور ہمارے ساتھ اس سیشن میں سکھ برادری کے نوجوان بھی تھے جن سے ہماری کافی انسیت بڑھ گئی۔
اس ٹریننگ کے جس طرح باقی پہلوؤں پر بات کی کہ ہمیں سکھایا گیا۔ وہیں ہمیں یہ بھی سکھایا گیا کہ ہم صحیح ریسرچ کیسے کر سکتے ہے۔ ہم نوجوان اگر کوئی پراجیکٹ کرنا چاہیے تو کن اصولوں کو اپنا کر ہم کرسکتے ہیں۔
آجکل ڈیجیٹل دور ہے، اس ٹریننگ میں ہمیں ٹیکنالوجی کا صحیح استعمال بتایا گیا اور ہم کیسے اس سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ صرف ہمیں باتوں سے نہیں سیکھایا بلکہ ہم سے وہیں پر سرگرمیاں کروا کر سکھایا گیا جس سے ہمیں ایک دوسرے کو سمجھنے میں آسانی ہوئی۔ اور کچھ نیا سیکھنے کو بھی ملا۔ برگد کی وجہ سے میری سوچ اور میری زندگی بدل گئی۔ ان چھ دنوں میں مجھے بہت کچھ نیا سیکھنے کو ملا۔ ساتھ ہی نئے لوگ بھی ملے، جنہیں ہمیشہ یاد رکھوں گی۔
اس ٹریننگ کے حوالے سے اگر جتنی بات کی جائے وہ کم ہے۔ جتنا ہمیں برگد نے سہولیات دی شاید الفاظ بھی کم پڑھ جائیں۔ ہماری سوچ کو صحیح راہ دکھائی۔ ہمیں ایک زندگی کا صحیح مقصد بتا دیا کہ ہم نوجوان اگر کچھ اچھا کرنا چاہیں تو کر سکتے ہیں کیونکہ نوجوان ملک کا سرمایہ ہوتے ہیں۔

تو شاہیں ہے پرواز ہے کام تیرا
تیرے سامنے آسماں اور بھی ہیں
نہیں تیرا نشیمن قصر سلطانی کے گنبد پر
تو شاہیں ہے بسیرا کر پہاڑوں کی چٹانوں پر
پرواز ہے دونوں کی اسی ایک فضا میں
شاہیں کا جہاں اور ہے کرگس کا جہاں اور

اپنا تبصرہ بھیجیں