اعلیٰ جمالیاتی حسن کا نادر نمونہ جامع مسجد عابد۔۔۔رانا فیصل جاوید

سرگودھا یونیورسٹی کی جامع مسجد فنِ تعمیر، خوبصورتی اور تاریخی پسِ منظر کی بدولت منفرد مقام رکھتی ہے(تصاویر : طیب الرحمن)

سرگودھا یونیورسٹی کی جامع مسجد عابد اپنے فنِ تعمیر، خوبصورتی اور تاریخی پسِ منظر کی وجہ سے منفرد مقام رکھتی ہے۔ یہ مسجد جہاں یونیورسٹی کے طلبہ کی دینی و اخلاقی تربیت کا باعث ہے وہیں ریجن بھر کے لوگ اس مسجد سے دلی وابستگی رکھتے ہیں۔یہ دیدہ زیب مسجد سر سید احمد کے پوتے پروفیسر ڈاکٹر عابداحمد علی کے نام سے منسوب ہے جو 1950ء سے 1958ء تک گورنمنٹ کالج سرگوددھا کے پرنسپل رہے اور ایک صاحب علم شخصیت تھے۔ انہی کے دور میں یہ خوبصورت مسجد تعمیر کی گئی تاہم موجودہ وائس چانسلر کی خصوصی دلچسپی سے اس مسجد کی جدید تقاضوں کے مطابق از سرِ نو تزئین و آرائش اور توسیع کا کام مکمل ہوا ہے۔ اس مسجد کو کثیر المقاصد بنایا گیا ہے جہاں مذہبی فرائض کی ادائیگی ا وراجتماعات کا بخوبی انعقاد کیا جا سکتا ہے۔

سرگودھا یونیورسٹی نے مسجد کی از سرِ نو تزئین و آرائش اور توسیع کر کے اسے کثیر المقاصد بنایا ہے

یہ مسجد اعلیٰ جمالیاتی حسن کا نادر نمونہ ہے اور اس کے در و محراب مسجد قرطبہ کی طرز پر تعمیر کیے گئے ہیں جس کیلئے لکڑی اور جالی کا استعمال کیا گیا ہے۔ اس کے محرا ب میں کھڑے ہو کر تلاوت کی جائے تو پورے ہال میں آواز کا ارتعاش اس انداز سے پیدا ہوتا ہے کہ لاؤڈ سپیکر کی ضرورت محسوس نہیں ہوتی۔محراب پر مسلم عہد کے جیومیٹریکل فن تعمیر کے نمونے نقش ہیں۔ ہال کے مرکزی گنبد کے نیچے دیدہ زیب فانوس نصب کیا گیا ہے جس کی روشنی سے پوری مسجد منور ہوتی ہے۔یہ فانوس سرگودھا کی سماجی شخصیت حاجی عبدالرحمن نے ہدیہ کیا ہے۔ مسجد کے مرکزی ہال کی چار دیواری پراسلامی تعلیمات،اخلاقی و سماجی اقدار اور تعلیم و تعلم کے موضوعات پر مشتمل منتخب قرآنی آیات کی دل آویز خطاطی کی گئی ہے جس کو دیکھ کر روح سرشار ہو جاتی ہے۔مسجد کی اندرونی دیوار وں پر سورۃ رحمن لکھی گئی ہے جو اپنی خوبصورتی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔یہ کیلی گرافی جہاں مختلف رنگوں کے حسین امتزاج کی حامل ہے وہیں ان رنگوں میں مزید نکھار پیدا کرنے کیلئے بڑی نفاست کیساتھ لائٹس کا استعمال کیا گیا ہے۔اسی طرح جامع مسجد عابد کا خوبصورت اور پرشکوہ سبز و فیروزی گنبد دیکھنے والوں پر سحر طاری کر دیتا ہے۔

جامع مسجد عابد کا خوبصورت اور پرشکوہ سبز و فیروزی گنبد دیکھنے والوں پر سحر طاری کر دیتا ہے

سرگودھا یونیورسٹی کی ایس ٹی سی بلڈنگ کی بالکنی سے فوارا چوک اور جامع مسجد عابد کا خوبصورت منظر

مسجد کے صحن کے فرش پر نفیس سنگ مر مر لگایا گیا ہے۔بارش اور دھوپ کے اثرات سے نمازیوں کو بچانے کیلئے مسجد کے صحن میں جدید سلائڈنگ(برقی) چھت نصب کی گئی ہے جس کو ضرورت کے مطابق کھولا اور بند کیا جا سکتا ہے۔ علاوہ ازیں مسجد کے دائیں جانب ایک برآمدہ اور ذیلی و مرکزی دروازہ ازسر نو تعمیر کیا گیا ہے جس سے ایک ہی وقت میں نمازیوں کی آمدورفت میں سہولت ہوئی ہے اور مسجد کا حسن بھی دوبالا ہوگیا ہے۔ جامع مسجد عابد 15435مربع فٹ پر محیط ہے اور1900سے زائد نمازیوں کی گنجائش رکھتی ہے۔

ماہ ربیع الاوّل سمیت دیگر اسلامی تہواروں اور قومی دنوں کی مناسبت سے مسجد کو برقی قمقموں سے سجایا جاتا ہے تو یونیورسٹی کی خوبصورتی کو چار چاند لگ جاتے ہیں


پر یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ طالبات کیلئے نماز کی ادائیگی کیلئے الگ کشادہ ہال بھی تعمیر کیا گیا ہے۔ یہ مسجد جہاں اپنے عہدمیں فنِ تعمیر کا شاہکار تھی، آج بھی نفاست و تقدیس کی دلکش علامت ہے اور یونیورسٹی کے حسن کو دوچند کرنے کا باعث ہے۔

اعلیٰ جمالیاتی حسن کا نادر نمونہ جامع مسجد عابد۔۔۔رانا فیصل جاوید” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں